کینسر اصل میں ہمارے جنیاتی مادے میں تبدیلی کا نام ہے، ہمارے جسم میں خلیے تقسیم ہوتے رہتے ہیں، اِن خلیوں کی تقسیم ایک خودکار نظام کے تحت ہردم مانیٹر ہوتی ہے تاکہ یہ تقسیم درست طریقے سے ہوتی رہے۔

کسی وجہ سے اگر یہ خودکار نظام کام کرنا چھوڑ دے تو خلیے بہت تیزی سے تقسیم ہونا شروع ہو جاتے ہیں اور انہیں کنٹرول کرنا ممکن نہیں رہتا، اس صورتحال کو کینسر کہتے ہیں۔سپریم کورٹ نے خواتین میں بریسٹ کینسر کے بڑھتے کیسز کا نوٹس لے لیا -  ایکسپریس اردو

منہ اور oropharyngeal کینسر کے علاج کیلئے سرجری، ریڈیو تھراپی ، کیموتھریپی ، ٹارگٹ تھراپی اور ان کا ایک مجموعہ سمیت بہت سے طریقے استعمال ہوتے ہیں۔ عام طور پر سرجری کے بعد تابکاری کےعلاج کا ایک کورس کینسر کی تکرار کو روکنے میں مدد فراہم کیا جاسکتا ہے۔

اس حوالے سے اے آر وائی نیوز کے پروگرام باخبر سویرا میں ماہر صحت ڈاکٹر اصغر حسین اصغر نے کینسر کے اسباب اور اس کے علاج سے متعلق اہم معلومات فراہم کیں۔

انہوں نے کہا کہ بہت سی ایسی غذائیں ہیں جو کینسر کا باعث بن رہی ہیں اس کے علاوہ اور بھی وجوہات ہیں لیکن یہ بھی ضروری نہیں کہ ہر پان گٹکا کھانے والا کینسر کا مریض بن جائے۔

ڈاکٹر اصغر حسین اصغر نے بتایا کہ کینسر کی علامات میں ہیں کہ اگر شدیدی کھانسی دوہفتے سے زیادہ ہوجائے تو اسے دمہ یا ٹی بی نہ سمجھیں بلکہ فوری طور پر ٹیسٹ کروائیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں